273

پشاور میں سٹریٹ کرائمز پر قابو پانے کیلئے حکمت عملی طے

پشاور۔صوبائی دارالحکومت پشاورمیں سٹریٹ کرائمز پر قابو پانے کیلئے پولیس کے ساتھ ساتھ سپیشل برانچ اور سی ٹی ڈی کی خدمات بھی حاصل کرنے کا فیصلہ کیاگیا ہے جبکہ سود خوروں ٗ آئس و منشیات فروشوں کے خلاف موثر کاروائی اورسرچ اینڈ سٹرائیک اور انٹیلی جنس کی بنیادوں پر آپریشنز یقینی بنانے کی ہدایت کی جبکہ سی ٹی ڈی ،آئی بی اور سپیشل برانچ کو آپس میں رابطے مزید مستحکم بنانے کا حکم دیاگیا ہے

اس ضمن میں گزشتہ روز آئی جی پی خیبر پختونخوا صلاح الدین محسود کی زیر صدارت اجلاس منعقدہوا جس میں سی سی پی او پشاور ،ڈی آئی جی سی ٹی ڈی ،ڈی آئی جی ٹریننگ ،ڈی آئی جی انکوائری اینڈانسپکشن ،ڈی آئی جی آپریشن،ایس ایس پیز آپریشن و انوسٹی گیشن ٗ سی ٹی ڈی ور ڈویڑنل ایس پیز نے شرکت کی آئی جی پی نے ہدایت کی ہے کہ وسیع پیمانے پر انسدادی کاراوئی کی جا ئے گی 
جنسی جرائم کی صورت میں فوری ایکشن لیا جائے گاجبکہ جرائم میں نامزدشخص کو گرفتار کرنے اور مجرمان اشتہاری پر کڑی نظر رکھی جائے انہوں نے کہاکہ جیلو ں سے آزاد ہونے والے مجرمان پر خصوصی نگرانی رکھی جائے تھانوں کی سطح پر شفافیت کو یقینی بنایا جائے گا اور آئس اور دیگر منشیات کے خلاف ایکشن لیا جائے سٹریٹ کرائمزکے حوالے سے سپیشل برانچ اور سی ٹی ڈی کا تعاون حاصل کیا جائے گا

سود کے خلاف قانون کے مطابق سخت کاروائی عمل میں لائی جائے گی سی پی او اور ا یس ایس پی آپریشن تعلیمی اداروں اور دیگر حساس اور غیر محفوظ مقامات کی متعلقہ ایس ڈی پی او کی موجودگی میں وقتاََ فو قتاََچیکنگ کرینگے اسلحہ اور منشیات میں کوئی غلط پرچہ نہیں کٹے گاغیر رجسٹرڈاور بغیر نمبر پلیٹ والی موٹر سائیکلوں کے خلاف مہم چلائی جائے گی سی ٹی ڈی ،آئی بی اور سپیشل برانچ آپس میں اینٹلی جنس شیر نگ کرینگے گے اور کرائمز پر ماہانہ میٹنگ کا انعقاد کرینگے التوں کی سیکورٹی کاجائزہ لینے کے لئے ڈی پی او، سیشن جج کے ساتھ ملکر عدالتوں کا دورہ کرینگے اور اس حوالے سے رپورٹ مرتب کرینگے جو ہائی کورٹ کے رجسٹرار ،آئی جی پی اور سینیر سیشن جج کو بھیجی جا ئیگی شیڈول فور میں شامل دہشت گردوں پر کڑی نظر رکھی جائے گی۔