553

پشاور ہائیکورٹ نے کیپٹن (ر)صفدرکی گرفتاری روک دی

پشاور۔پشاورہائی کورٹ نے نیب خیبرپختونخوا کو وارنٹ جاری کئے بغیرپاکستان مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما اورسابق رکن قومی اسمبلی کیپٹن ریٹائرڈصفدرکی گرفتاری سے روک دیا ہے اوران کی ممکنہ گرفتاری کے خلاف دائردرخواست نمٹادی عدالت عالیہ کے جسٹس روح الامین چمکنی کی سربراہی میں قائم دورکنی بنچ نے کیپٹن(ر) صفدر کی جانب سے بیرسٹرمدثرامیرکی وساطت سے دائررٹ کی سماعت کی۔

اس موقع پر ان کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ نیب خیبرپختونخوادرخواست گذار کے خلاف تحقیقات کررہا ہے اورانہیں کسی بھی وقت گرفتارکرسکتاہے انہوں نے عدالت کو بتایا کہ نیب درخواست گذار کو کسی اورکیس میں طلب کرتی ہے اورپھریہ گرفتاری کسی اورکیس میں کرتے ہیں جس پرجسٹس روح الامین چمکنی نے کیپٹن رصفدرکو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ نیب آپ کو بلاتی ہے تو آپ جایا کریں آپ کیوں گھبراتے ہیں جس پران کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ہم تو پورے ملک کے نیب آفس میں پیش ہورہے ہیں ۔

اس موقع پر نیب کے پراسیکیوٹرجمیل خان نے عدالت کو بتایا کہ نیب ان کو بلاتی ہے تو یہ پیش نہیں ہوتے جس پر جسٹس روح الامین نے درخواست گذار کو کہاکہ نیب کے ساتھ آپ تعاون کریں نیب آپ کو گرفتار نہیں کرے گا عدالت نے نیب کو کیپٹن ریٹائڑڈ صفدر کو بغیر وارنٹ کے گرفتاری سے روک دیا اورحکم دیاکہ کیپٹن(ر)صفدر کو گرفتار کرنا ہو تو 10 دن پہلے وارنٹ جاری کرنا ہوگابعدازاں عدالت نے رٹ پٹیشن نمٹادی ۔