566

پلاسٹک شاپنگ بیگزکے استعمال پر جرمانوں کا آغاز

پشاور۔خیبرپختونخواحکومت نے صوبہ بھر میں پلاسٹک شاپنگ بیگزپرپابندی عائد کرتے ہوئے اعلان کیاہے کہ حکومت کی جانب سے مقرر کردہ شاپنگ بیگزکے علاوہ اگر کسی دکاندارکے پاس پایاگیاتواسے پچاس ہزارروپے سے لیکر پچاس لاکھ تک جرمانہ کیاجائیگا

اسی طرح صوبے کے تمام ہوٹلوں کی بھی اسکے خوراک کے متعلق درجہ بندی کی جائیگی ،میڈیاسے گفتگوکرتے ہوئے صوبائی وزیراطلاعات شوکت یوسفزئی نے کہاکہ وزیراعلیٰ محمودخان نے ان کی سربراہی میں ایک کمیٹی قائم کی تھی جس نے2016میں پلاسٹک شاپنگ بیگز پر پابندی عائد کرنے کی سفارش کی تھی تاہم مقامی تاجروں کے ساتھ مشاورت کے بعد اس میں توسیع کی گئی اب حکومت نے فیصلہ کیاہے کہ ماحول دشمن تمام شاپنگ بیگزکوتلف کیاجائیگا 

انہوں نے کہاکہ حکومت نے فیصلہ کیاہے کہ اب پلاسٹک شاپنگ بیگزآکسی بائیوڈگریڈیبل یعنی قابل تلف ہونگے اور اس کا معیار پچاس مائیکرون کاہوگا پچاس مائیکرون سے نیچے کے شاپنگ بیگز کو نقصان دہ سمجھ کر اس پرجرمانہ عائد کیاجائیگا اس قانون کے قواعدوضوابط بھی بنائے گئے ہیں صوبائی حکومت نے تمام ڈپٹی کمشنرزکواحکامات جاری کئے ہیں کہ تمام متعلقہ اضلاع میں دفعہ144نافذ کرکے ناقص معیار کے پلاسٹک شاپنگ بیگزکیخلاف کریک ڈاؤن کیاجائے جس دکاندار کے پاس ناقص معیار کے شاپنگ بیگزپائے گئے اس پر پچاس ہزار سے لیکر پچاس لاکھ تک جرمانہ کیاجائیگا

اگراسکے بعد بھی اس دکاندارکے پاس مزید شاپنگ بیگزپائے گئے تو اسے جرمانے کے ساتھ دوسال قید کی سزابھی سنائی جائیگی۔شوکت یوسفزئی نے کہاکہ ابتدائی طور پر یہ فیصلہ پلاسٹک شاپنگ بیگزکے خلاف کیاگیاہے دوسرے فیز میں پلاسٹک سے تیار ہونے والی دیگرمصنوعات کے خلاف بھی جانچ پڑتال کے بعد کریک ڈاؤن کیاجائیگا انہوں نے کہاکہ محکمہ خوراک یا فوڈاتھارٹی صوبے کے تمام ہوٹلوں کے کچن کی چیکنگ کریگی اور ان کے معیار کے مطابق اے ،بی اورسی درجوں میں تقسیم کرے گی اس کے علاوہ ہوٹلوں کے معیار کو دیکھتے ہوئے سٹارزبھی دئیے جائینگے جن کے مطابق وہ کرایہ وصول کرسکیں گے۔