621

بی آر ٹی منصوبہ 13جدید سہولیات سے مزئین

پشاور۔ بس ریپڈ ٹرانزٹ منصوبہ لاہور ‘ پنڈی اور ملتان میٹرو بس منصوبوں کی نسبت 13 جدید سہولیات سے مزئین ہے ‘پی ڈی اے کی سرکاری دستاویزات کے مطابق بی آر ٹی میں تھرڈ جنریشن سسٹم ڈائریکٹ سروس کا فیچر شامل ہے جس کے ذریعے سات مختلف علاقوں سے آنے والی فیڈر بسیں براہ راست مین کاریڈور میں داخل ہوں گی جبکہ اس قسم کی سہولت کسی بھی میٹرو میں موجود نہیں۔

کمرشل ایریا کے ساتھ رش اوقات کے بعد بسوں کو کھڑا کرنے کی سہولت بھی فراہم کی گئی ہے تاکہ ضرورت کے مطابق بسوں کو روٹ پر چلایا جاسکے۔تیسری جدید سہولت پارکنگ پلازہ ہیں جنھیں ملٹی میگا شاپنگ پلازوں میں تبدیل کیا گیا ہے چمکنی ڈبگری اور حیات آباد کے تینوں میگا پلازوں میں بسوں پارکنگ کے ساتھ عام گاڑیاں بھی پار ک ہوں گی جبکہ شاپنگ سنٹرز میں 4لاکھ افراد شاپنگ کر سکیں گے شاپنگ پلازوں میں جدید ترین سہولیات کو یقینی بنایا جائے گا۔ بی آر ٹی ٹریک میں بسوں کے لئے اورٹیکنگ کی سہولت بھی فراہم کی گئی ہے تاکہ کوئی بھی بس باآسانی اوورٹیک کرسکے اس قسم کی سہولت دیگر میٹرو منصوبوں میں موجود نہیں۔دستاویز کے مطابق موجودہ جی ٹی روڑ کے ساتھ سائیکل روٹ بھی تیار کیا گیا تاکہ سائیکل سوار سڑک کے کنارے سفر کرسکیں۔ منصوبے کے تحت پیدل چلنے والوں کے لئے فٹ پاتھ تیار ہوچکے ہیں۔

تمام سٹیشنوں میں ریسٹ رومز کی سہولت فراہم کی گئی ہے جبکہ واش رومز کو بھی سٹیشنوں کا حصہ قرار دیا گیا ہے۔حکومت کی خصوصی ہدایات کی روشنی میں تمام بسوں و سٹیشنوں میں وائی فائی کی سہولت موجود ہوگی تاکہ لوگ نیٹ سے مفت فائدہ اٹھاسکیں۔ بسوں اور سٹیشنوں پر خواتین کے لئے الگ جگہ مختص کی گئی ہے تاکہ خواتین کو کسی قسم کی پریشانی سے بچایا جائے۔ کمرشل پلازوں کے ساتھ سڑک عبور کرنے کے لئے پل تعمیر کئے گئے ہیں تاکہ لوگ باآسانی سڑک عبور کرسکیں۔سپشل افراد کے لئے بس میں سفر کو سہل بنادیا گیا ہے تاکہ انھیں کسی قسم کی دقت کا سامنا نہ کرنا پڑیاب معذور افراد بی آر ٹی میں سفر کرسکیں گے۔پشاور یونیورسٹی میں طلبا کے لئے سو سائیکلوں کا بندوبست بھی کیا گیا ہے تاکہ بس کے زریعے یونیورسٹی آنے والے طلباء سائیکل کے ذریعے اپنے متعلقہ ڈیپارٹمنٹ جاسکیںاس اقدام سے ماحولیاتی آلودگی میں کمی اور سائیکل کے سفر کو فروغ ملے گا۔