226

عوامی شکایات ٗ پٹواریوں پر کڑی نظر رکھنے کی ہدایت

پشاور۔وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے ضلع پشاور میں تمام اداروں اور محکموں کوکارکردگی بہتر بنانے کی ہدایت کی ہے اور کہا ہے کہ پشاور صوبے کا دارلحکومت ہونے کی وجہ سے ہم سب کی ترجیحات میں اول اور توجہ کا مرکز ہونا چاہیئے۔ ہر شعبے میں عوام کو شفاف طریقے سے موثر خدمات کی فراہمی اور شکایات کے ازالے کا قابل عمل طریقہ ہونا چاہیئے۔ انہوں نے عوام کی بڑھتی ہوئی شکایات کے پیش نظر ضلعی انتظامیہ پشاور کو پٹواریوں پر کڑی نظر رکھنے کی ہدایت کی ہے اور واضح کیا ہے کہ اس عمل میں کسی قسم کا اثر و رسوخ برداشت نہیں کیا جائے، اْن کی حکومت شفافیت پر کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی۔ اْنہوں نے شعبہ تعلیم میں شفافیت یقینی بنانے اور اْن کی کارکردگی بہتر کرنے کیلئے کلیریکل سٹاف کی ری شفلنگ (تبادلوں) سے اْصولی اتفاق کیا ہے اور واضح کیا کہ اساتذہ کے تبادلے صوبائی محکمہ تعلیم کی موجودہ پالیسی کے تحت ہونے چاہئیں۔ وزیراعلیٰ نے ڈپٹی کمشنر پشاور کو ہدایت کی کہ پشاور کے منتخب عوامی نمائندوں کے ساتھ ماہانہ میٹنگ کریں تاکہ مسائل کے تیز رفتار حل کیلئے اجتماعی سوچ کے تحت قابل عمل حکمت عملی اختیار کی جا سکے۔

اْنہوں نے کہاکہ ہسپتالوں خصوصاً بنیادی مراکز صحت اور رورل ہیلتھ سنٹر میں سہولیات کی کمی کو مرحلہ وار دور کر رہے ہیں۔ متعلقہ حکام کو اس سلسلے میں فہرست تیار کرنے کی ہدایت پہلے سے جاری کی جا چکی ہے۔ وہ وزیراعلیٰ ہاؤس پشاور میں ضلع پشاور کے مسائل کے حوالے سے اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ وزیر خزانہ تیمور سلیم جھگڑا، وزیر صحت ہشام انعام اللہ، معاون خصوصی کامران بنگش، پشاور کے اراکین صوبائی اسمبلی، متعلقہ محکموں کے انتظامی سیکرٹریز، ڈی جی پی ڈی اے، چیف ایگزیکٹیو ڈبلیو ایس ایس پی، ڈائریکٹر ایجوکیشن، ڈی سی پشاور، ڈی جی صحت، ای ڈی او ایجوکیشن اور دیگر متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔ اجلاس میں ضلع پشاور کے مختلف شعبوں میں مسائل کا جائزہ لیا گیا اور اْن کے حل کیلئے متعدد اہم فیصلے کئے گئے۔ وزیراعلیٰ نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ہم نے پشاور کی شکل و صورت تبدیل کرنی ہے اور عوام کے مسائل کا خاتمہ کرنا ہے۔اْنہوں نے ڈبلیو ایس ایس پی کو ہدایت کی کہ اپنے سٹاف کو ہمہ وقت متحرک رکھے اور دوسری شفٹ کا اجراء جلد ممکن بنائے۔ عوام کی شکایات پر فوری ریسپانس دیا جائے شہر کی صفائی و ستھرائی ترجیح ہونی چاہیئے۔

 اْنہوں نے پی ڈی اے کو بھی ہدایت کی کہ جاری ترقیاتی سکیموں کی وجہ سے عوام کو درپیش تکالیف ختم کرنے کیلئے طریقہ کار وضع کریں۔وزیراعلیٰ نے کہاکہ جاری ترقیاتی سکیموں کو مکمل کرنا حکومت کی ترجیح ہے۔ اس مقصد کیلئے وسائل مہیا کئے جائیں گے۔ صحت کے حوالے سے وزیراعلیٰ نے کہاکہ صوبائی حکومت بی ایچ یوز اور آرایچ سی ز میں سہولیات کی فراہمی یقینی بنانے کیلئے اقداما ت کر رہی ہے۔ بڑے ہسپتالوں میں مریضوں کا رش کم کرنے کیلئے ایک علیحدہ سٹیٹ آف دی آرٹ ایمرجنسی اینڈ ٹراما سنٹر قائم کرنے کی منصوبہ بندی کر رہے ہیں۔

محمود خان نے شعبہ تعلیم میں تبادلوں و تعیناتیوں کے حوالے سے حکومتی پالیسی پر عمل درآمد یقینی بنانے کی ہدایت کی اور کہاکہ موجودہ حکومت میں سیاسی تبادلوں و تعیناتیوں کی گنجائش موجود نہیں ہے۔ وزیراعلیٰ نے پراپرٹی (ملٹی سٹوری بلڈنگز) پر ٹیکس کا مسئلہ پہلے سے قائم کمیٹی کے ذریعے حل کرنے اور یکساں پالیسی اختیار کرنے کی ہدایت کی ہے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پشاور کے تمام حلقوں کیلئے ترقیاتی کاموں کی منصوبہ بندی کر رہے ہیں جس کے تحت تمام حلقوں کیلئے یکساں فنڈ کی فراہمی یقینی بنائی جائے گی۔وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ تحریک انصاف کی حکومت پورے صوبے اور خصوصا ً پشاور شہر میں عوام کو خدمات کی فراہمی حقیقی معنوں میں مہیا کرنے کے جذبے سے سرشار ہے جبکہ عوام کو تمام ممکن سہولیات فراہم کرنا صوبائی حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔