143

الیکشن میں دہشت گردی کرنیوالا سہولت کار سمیت گرفتار

پشاور۔محکمہ انسداد دہشت گردی خیبرپختونخوا نے انتخابی مہم کے دوران جمعیت علماء اسلام (ف) کے رہنماؤں وامیدواروں سابق وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا و فاقی وزیر اکرم خان درانی اور ملک شیرین مالک پر بم حملوں میں ملوث دہشت گرد کو سہولت کار سمیت گرفتار کرلیا ہے گرفتار دہشت گردوں کا تعلق تحریک طالبان پاکستان کے کمانڈر اختر محمد عرف عبد اللہ وزیرستانی گروپ سے ہے جبکہ مرکزی دہشت گرد صدیق اللہ افغانستان سے دہشت گردی کے منصوبے سے اپنی ٹیم کے ساتھ پاکستان میں الیکشن کے دوران کاروائیاں کرنے کیلئے آیا تھا۔

محکمہ انسداد دہشت گردی پشاور ہیڈ کوارٹر سے جاری بیان کے مطابق خفیہ ذرائع سے اطلاع موصول ہوئی تھی کہ سابق وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا و قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 35 بنوں سے متحدہ مجلس عمل کے اُمیدوار اکرم خان درانی اور خیبرپختونخوا اسمبلی کے حلقہ پی کے 89 سے متحدہ مجلس عمل کے ہی اُمیدوار ملک شیرین مالک پر موٹرسائیکل ریموٹ کنٹرول بم کے ذریعے حملہ کرنے میں ملوث دہشت گرد صدیق اللہ ولد زریم خان ساکن دتہ خیل شمالی وزیرستان اور اس کا سہولت کار قدر آیاز ولد عیسیٰ خان ساکن گربز بکا خیل اس وقت بنوں میں موجود ہے۔

بیان کے مطابق اطلاع کو مصدقہ جانتے ہوئے سپیشل پولیس یونٹ بنوں کی ایک ٹیم تشکیل دی گئی جس نے کاروائیوں کرتے ہوئے دونوں ملزمان کو گرفتار کرلیابیان میں بتایا گیا ہے کہ گرفتار سہولت کار قدر آیاز کا تعلق بھی تحریک طالبان پاکستان کے کمانڈر اختر محمد عرف عبد اللہ وزیرستانی گروپ سے ہیں اور دونوں دہشت گردوں نے ابتدائی تفتیش کے دوران اکرم خان درانی اور شیرین مالک سمیت دیگر حملوں کی ذمہ داریاں بھی قبول کرلی ہے جنہیں مزید تفتیش کیلئے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا ہے۔