228

پشاور میں ٹارگٹ کلنگ ٗصحافی جاں بحق ساتھی زخمی

پشاور۔ سربند اچینی چوک رنگ رڈ پر ٹارگٹ کلنگ کی مبینہ واردات کے دوران نامعلوم موٹر سائیکل سواروں کی چلتی گاڑی پر فائرنگ کے نتیجہ میں نجی نیوز چینل کا رپورٹر جاں بحق جبکہ کیمرہ مین شدید زخمی ہوگیا موٹرسائیکل پر سوار نامعلوم نقاب پوش افراد واردات کے بعد فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے واقعے کی اطلاع ملنے پر پولیس کی بھاری نفری جائے وقوعہ پر پہنچ گئی اور جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کرکے مختلف ذاویوں سے تفتیش کا آغاز کردیادوسری جانب آئی جی پی نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔

ٹارگٹ کلنگ کی مبینہ واردات کے بعد صحافیوں میں شدید غم و غصے کی لہر دوڑ گئی ہے پیر کے روز نوشہرہ سے تعلق رکھنے والا نجی نیوزچینل کا رپورٹر نور الحسن ولد حفیظ اپنے کیمرہ مین صابر ولد شمس الحق کے ہمراہ اپنی گاڑی میں کسی کام کے سلسلہ میں حیات آباد آرہا تھا کہ اس دوران اچینی چوک کے قریب موٹرسائیکل پر سوار دو نامعلوم مسلح افراد نے گاڑی پر اندھا دھند فائرنگ کردی جس کے نتیجہ میں دونوں شدید زخمی ہوگئے ۔

ملزمان واردات کے بعد فرار ہوگئے موقع پر موجود افراد نے زخمیوں کو طبی امداد کیلئے ہسپتال منتقل کردیا جہاں بعد ازاں صحافی نور الحسن زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا جبکہ کیمرہ مین صابر تاحال ہسپتال میں زیر علاج ہے جس کی حالت نازک بتائی جارہی ہے۔ دوسری جانب اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ پولیس (اے ایس پی) حیات آباد سرکل نجم الحسنین کے مطابق رنگ روڈ پر اچینی چوک میں پیش آنے والے واقعے میں ملزمان 125 سی سی موٹرسائیکل پر سوار تھے۔

جنہوں نے 9 ایم ایم پستول کے ذریعے گاڑی پر فائرنگ کی ، واقعے کے بعد جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کرکے تفتیش کا دائرہ وسیع کردیا ہے جبکہ ملزمان کی گرفتاری کیلئے جائے وقوعہ پر سی سی ٹی وی کیمروں کا بھی تعین کیا جارہا ہے اگر آس پاس کہی کیمرے نصب پائے گئے تو اُن سے فوٹیج حاصل کی جائے گی۔