231

پشاور میں ہیروئن بنانے والی فیکٹری کا سراغ 

پشاور۔پشاور پولیس نے وٹرنری ڈاکٹر کے زیر انتظام ہیروئن کی فیکٹری کا سراغ لگاکر ملزم کو گرفتار کرلیاپولیس نے فیکٹری سیل کرکے 6کلو گرام ہیروئن ٗ خام مال، ہیروئن بنانیوالے اوزاراور مشینری برآمد کرلی ملزم ہیروئن تیار کرکے ملک کے دیگر شہروں کے ساتھ ساتھ افغانستان بھی سمگل کرنے میں ملوث ہے پولیس نے مزید تفتیش شروع کردی ہے۔

اس ضمن میں گزشتہ روز ایس ایس پی آپریشنز ظہور بابر آفریدی نے ایس پی صدر ڈویژن صاحبزادہ سجاد اور ایس ایچ اوعمران خان کے ہمراہ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایاکہ گزشتہ روز اطلاع ملی کہ نواحی علاقہ موسیٰ زئی میں ہیروئن بنانے کی فیکٹری قائم کی ہے جہاں اعلی کوالٹی ہیروئن تیار کرکے ملک کے دیگر شہروں کو سمگل کی جاتی ہے ۔

اطلاع ملتے ہی ان کی ہدایت پر قائم خصوصی ٹیم نے کھنڈر نما گھر پر چھاپہ مارکر ہیروئن فیکٹری سیل کرکے مرکزی ملزم ڈاکٹر عمر فاروق ولد گل خان سکنہ پھندوکو گرفتار کر لیا، ملزم پیشے کے لحاظ سے وٹرنری ڈاکٹر ہے ہیروئن بنانے کے ماسٹر مائنڈ ڈاکٹر عمر فاروق نے ابتدائی تفتیش کے دوران ہیروئن بنا نے کے بعد ملک کے دیگر شہروں کو سمگل کرنے کا اعتراف کر لیا ہے جس کیخلاف مقدمہ درج کرکے مزید تفتیش کے لئے حوالات منتقل کر دیا گیا۔