586

متحدہ اپوزیشن کااحتجاج ٗ شہرمیں ٹریفک کانظام درہم برہم

پشاور۔عام انتخابات میں مبینہ دھاندلی کیخلاف مرکزی قائدین کی کال پر خیبر پختونخوا کی اپوزیشن جماعتوں نے بھی پشاور میں الیکشن کمیشن دفتر کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا جس میں مختلف جماعتوں کے امیدوار وں اور کارکنوں نے شرکت کی ۔ احتجاج کے موقع پر انتظامیہ نے مختلف روٹس بند کر دئیے تھے اور سکیورٹی کے اضافی اہلکار تعینات کر دئیے گئے تھے۔

جس کے باعث شہربھرمیں ٹریفک کانظام درہم برہم ہوکررہ گیاتھا جبکہ پولیس نے جگہ جگہ رکاوٹیں لگائی تھی، احتجاج میں متحدہ مجلس عمل کے صوبائی صدر مولانا گل نصیب خان ٗعوامی نیشنل پارٹی کے سیکر ٹری جنرل میاں افتخار حسین شاہ،مسلم لیگ ن کے صوبائی رہنماء ارباب خضرحیات ٗ ایڈیشنل سیکر ٹری اطلاعات اختیار ولی خان،قومی وطن پارٹی کے صوبائی چیئر مین سکندر خان شیرپاؤ،جماعت اسلامی کے صابر اعوان اور د یگر سیاسی و مذہبی جماعتوں کے امیدواروں اور ایم این اے، ایم پی ایز کے علاوہ پارٹی کے کارکن بھی شامل تھے ۔

الیکشن کمیشن دفتر کے سامنے متحدہ اپوزیشن کی کال پر ہونیوالے احتجاج کے دوران مظاہرین نے جی ٹی روڈ کو ہر قسم کی ٹریفک کیلئے بند رکھا اور الیکشن کمیشن کیخلاف شدیدنعرے بازی کی گئی ،مظاہرین کا کہناتھا عمران خان کو دھاندلی کے ذریعے جتوایا گیا، ملک بھر میں جہاں جہاں بھی انتخابات ہو رہے تھے تحریک انصاف نے وہاں دھاندلی کی ہیں اور دھاندلی کے بل بوتے پر جیتے ہیں،عام انتخابات میں الیکشن کمیشن اپنی ذمہ دار یاں احسن طریقے سے پوری نہیں کر رہا تھا اور الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کا ساتھ دیا ہے ، الیکشن کمیشن دفتر کو جانے والے راستوں کو سکیورٹی فورسز نے خار دار تار وں کے ذریعے سیل کردیا تھا۔

مظاہرین کا کہنا تھا کہ پولیس نے شہر کے مختلف راستوں پر کارکنوں کو احتجاج میں شرکت سے روکا جارہا ہے ،احتجاج کو پر امن بنانے کیلئے الیکشن کمیشن افس کے باہر سخت سیکورٹی کے انتظامات کئے گئے ہیں ،پولیس کی بھاری نفری پر تعینات ایس پی کینٹ وسیم ریاض نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ سیا سی جماعتوں کوپر امن احتجاج کا بنیادی حق ہے انہیں ریڈ زون میں داخل ہونے کی کسی قسم کی اجازت نہیں دینگے جبکہ خیبر پختونخوا اسمبلی،الیکشن کمیشن اور دیگر سرکاری عمارتوں کی بھی سکیورٹی سخت کر دی۔