291

پشاور میں خواتین کے تنازعہ پر خونریز تصادم

پشاور۔تھانہ داؤدزئی کے علاقے دامان افغانی خواتین کے تنازعہ پر دو مسلح گروپوں کے مابین تصادم کے نتیجے میں چچازاد بھائیوں سمیت 3 افراد جاں بحق جبکہ ایک زخمی ہوگیا جسے تشویشناک حالت میں طبی امداد کیلئے ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے پولیس نے پوسٹ مارٹم کے بعد نعشیں ورثاء کے حوالے کردیں اور مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کردی ہے پولیس کے مطابق ہفتہ کے روز دامان افغانی فریق اول شیر علی اور ا فریق دوئم ارشاد کے مابین فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس کے نتیجے میں فریق اول سے شیر علی ولد مثل تاج اور اس کا چچا زاد بھائی مجاہد ولد مغل تاج لگ کر جاں بحق ہوئے۔

جبکہ فریق دوئم سے 13 سالہ علی ولد نواب سید جاں بحق جبکہ نور شاد ولد فضل سبحان زخمی ہوا جسے زخمی حالت میں حراست میں لے لیا گیا ہے پولیس کے مطابق فریق اول کے اسلم تاج ولد مثل تاج کی مدعیت میں ملزمان شاہد ، سہیل، شاہ خالد ، نور شاد پسران فضل سبحان اور مقتول علی کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے جبکہ دوسرے فریق کی جانب سے تاحال کسی قسم کی دعویداری نہیں کی گئی پولیس کے مطابق جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کرکے تفتیش کا آغاز کردیا ہے پولیس کے مطابق دونوں گروپوں کے مابین خواتین کے تنازعہ چلا آ رہا تھا تاہم مزید تفتیش شروع کردی گئی ہے ۔ پولیس نے تین افراد کے قتل کی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ تیار کرلی ہے۔

پولیس کے مطابق دونوں فریقین کی جانب سے ریکارڈ کئے گئے بیانات میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ تقریباً ایک سال قبل ارشادنے شیر علی کی ہمشیرہ کی بے عزتی کی تھی جس پر دونوں فریقین کے مابین تنازعہ چلا آرہا تھا اس تنازعہ کو حل کرنے کیلئے دونوں فریقین کے مابین کئی بار جرگے بھی ہوئے لیکن وہ ناکام ثابت ہوئے جس کے بعد ارشاد اور اس کے بھائیوں نے متاثرہ لڑکی کے اہل خانہ کو صلح کرنے کیلئے دھمکیاں دینا شروع کردیں اور پھر گزشتہ روز بات فائرنگ تک جا پہنچی پولیس کے مطابق مزید تفتیش جاری ہے ۔